Pak4all

    Khamoshi*Khamoshiyan

    Share
    avatar
    faran4all
    Administrator
    Administrator

    Number of posts : 1415
    Registration date : 2008-07-29

    all Khamoshi*Khamoshiyan

    Post  faran4all on Mon Aug 04, 2008 2:15 pm


    دو چار لفظ کہہ کر میں خاموش ہوگی
    وہ مسکراکے بولے بہت بولتی ہو تم



    یہ رات کی خاموشی بھی کچھ بول رہی ہے
    اور چاندنی بھی بندِ قبا کھول رہی ہے



    میں جب خاموش رہتا ہوں تو سب خاموش رہتے ہیں
    اگر اک لفظ بھی بولوں تو سارے شور کرتے ہیں



    لبِ خاموش سے افشا ہوگا
    راز ہر رنگ میں رسوا ہوگا


    تنہا رات ہے اور تنہا سفر بھی ہے
    خاموش تم بھی ہو ، خاموش ہم بھی ہیں
    تمہیں پانے کی آرزو میں
    اکیلے تم بھی ہو ، اکیلے ہم بھی ہیں



    دل میں تھی ویرانی ہم بھی تھے خاموش بہت
    وہ آئے تو جان گئے ہم موسم کتنا پیارا ہے



    ہر طرف خاموشی بسی ہے
    نہ کوئی لفظ جھڑتا ہے لب سے
    نہ کوئی آتی جاتی سانس کا شور ہے
    نہ ہی کہیں پیار کا گیت گاتی
    خاموش سسکیاں ہیں
    جب تم ہو یہاں
    تو اس خاموشی کا مطلب سمجھتی کیوں نہیں



    خاموش تھے لب ، صورت اقرار عجب تھی
    کیا کہتے صفائی میں کہ سرکار عجب تھی




    __________________

      Current date/time is Sun Dec 16, 2018 11:45 pm